محرم کی ثقافت: الحاد کی دو نمبر چپ-آخری حصّہ

%d8%af%d8%b1%d8%a7%d8%b3%db%83-%d8%a7%d9%84%d8%a7%d8%b3%d8%b7%db%8c%d8%b1

راحیل دنداش اس حوالے سے خزعل الماجدی عراقی ماہر تاریخ کے خیالات پیش کرتا ہے – اس نے بہت تحقیق اور عالمانہ انداز میں یہ ثابت کیا ہے کہ دیومالائیت کا عربوں کے اجتماعی شعور میں بہت ہی اہم کردار ہے –

وہ کہتا ہے کہ دیو مالائیت کلچر اور تہذیب کے دھاروں کی جان ہوتی ہے -دیومالائی کہانیاں ، ان سے ابھرنے والی رسومات اور خیالات کسی بھی سماج کی ثقافتی بنت کاری میں اہم ترین کردار ادا کرتے ہیں –

 اس کے خيال میں جب کسی مذھب کے نام پر کوئی پیورٹن تحریک (جس میں وہ وہابیت ، سلفیت کی مثال دیتا ہے )جب دیومالائی کہانیوں اور اس سے جنم لینے والی رسومات اور طور طریقوں کو  مذھب سے اور اسی بنیاد پر اس سماج کے کلچر  اور تہذیب سے نکالنے کی کوشش کرتی ہے تو پھر تباہی ، بربادی سامنے آتی ہے –

 اس طرح سے کسی طرح کی سچائی سامنے آنے کی بجائے ایک اور طرح کی دیومالائیت ، مائتھولوجیکل وے آف تھنکنگ سامنے آجاتا ہے اور وہ طرز فکر خزعل الماجدی کی ںظر میں آج عرب معاشروں کی تباہی کا باعث بنا ہوا ہے –

خزعل الماجدی کا کہنا ہے کہ عرب معاشرے سلفی وہابی تحریک کی شکل میں آج بھی قرون وسطی کے ایک نئی دیومالائیت کے ساتھ رہنے کی کوشش کررہے ہیں جو ان سماجوں کی جدیدیت کی راہ میں سب سے بڑی روکاوٹ بن چکی ہے اور یہ ترقی نہ کرنے اور سائنسی سوچ سے ہم آہنگ نہ ہونے کا اظہار بھی ہے-

 ماجدی کہتا ہے کہ اس طرح کی سلفیت کی سب سے خطرناک چیز یہ ہے کہ قرون وسطی سے ایسے مائتھ اور لیجنڈ ماضی کے اندھیری غاروں سے نکال کر لاتی ہے اور ان کو اجتماعی شعور کا حصّہ بناتی ہے جو دہشت ، خون خرابے اور مارا ماری کی نشانی ہوتے ہیں –ایسے لیجنڈ   سب کے سب استعاراتی شکل میں ایسے نعروں اور تمثیلوں میں ڈھل جاتے ہیں جن سے دھشت گردی کو ایندھن ملتا ہے ، تصادم ظہور پذیر ہوتا ہے ، خانہ جنگی کے امکانات بڑھ جاتے ہیں- اکثر یہ استعاراتی عمل خدا کے نام پر اور مقدس علامتوں کے زریعے کیا جاتا ہے –

مثال کے طور پہ اگر ہم محرم کی ثقافت کے مقابلے میں ان کی مائتھالوجی کو دیکھیں تو وہ یزید اور اس کی حکمرانی کے دور کو بنا سجاکر اور اس کے سپہ سالاروں کی نئی سیرت تخلیق کرنے میں ہے-اور یہ الزام کو بدل ڈالنے –بلیم شفٹنگ پہ بھی مبنی ہے اور اسے مسلم تاریخ کا سنہرا دور بناکر دکھانے کی کوشش کا بھی نام ہے- مسلم بن عقبہ ، بسراۃ اور کئی اور کردار غازی اور مجاہد اسلام بنکر سامنے آتے ہیں-

خزعل الماجدی کہتا ہے کہ سلفیت عرب معاشروں کی ثقافتی روح میں رواں دواں مائیتھولوجی اور اس سے ابھرنے والی رسوم اور طریقوں کو شرک ، بدعت قرار دیکر ان کی جگہ جو مقدس علامتیں مسلط کرنے کی کوشش کرتی ہے ان علامتوں نے پھر کار بم  دھماکوں ، خود کش جیکٹوں ،آر ڈی ایکس سے بھرے ٹرکوں کی ثقافت کو پروان چڑھایا ہے-

 مذھبی دھشت گرد گروپ اکثر چئیرٹی ، خیراتی اداروں ، نعروں ، علامتوں ، بینرز اور شہادت فی سبیل اللہ کے نعروں سے  ان کی نئی دیومالائیت تشکیل پاتی ہے-

 خزعل یہ بھی کہتا ہے کہ مائتھولوجی کو زیادہ سے زیادہ سادہ بنانےکا رجحان توحیدی مذاہب میں پایا جاتا ہے اور پیورٹن جیسے ہمارے سلفی ہیں وہ اس کو بالکل ہی ختم کرنے کے درپے ہیں ہوتے ہیں اور مدنیت یعنی شہری زندگی کی چکاچوند کو وہ واپس بدویانہ دور میں لیجانے کی کوشش کرتے ہیں اور اسی کے بطن سے انارکی جنم لیتی ہے –

کلچر کو خشک ملائیت اور اس کی انتہائی شکل تکفیریت  سے جن خطرات کا سامنا کرنا پڑتا ہے ، ان کی بدترین شکلیں مڈل ایسٹ کے اندر نظر آرہی ہیں-

آج محرم کی ثقافت کو ٹارگٹ کلنگ ، خود کش بم دھماکوں ، تکفیری آئیڈیالوجی سے پھیلنے والی نفرت نے محصور کردیا ہے اور آج جتنے بھی جلوس اور مجالس ہوتی ہیں ،ان میں کھلا پن مفقود ہوچکا ہے اور یہ محاصرے کی کیفیت میں ہوتی ہیں اور ان میں اہلسنت سمیت دیگر مذاہب کے لوگوں کی کھلی شرکت پہ پاکستان کے اندر ایک سوالیہ نشان لگ چکا ہے-الحاد کی دو نمبر چپ نے ہمارے ہاں براہ راست ثقافت دشمنی کے کلچر کو پروان چڑھا دیا ہے- اب یہاں حلیم پکانا اور اس کی نیاز بانٹنا بھی رافضی ہوجانا ہے اور سوگ اس مہینے میں منانا بھی مذہب سے ہاتھ دھوبیٹھنا تو ہے ہی ،ساتھ ہی یہ ترقی پسندی ، روشن خیالی اور اشتراکیت کے مخالف بھی ٹھہرایا جانے لگا ہے-یہ ایک اور طرح کی دیومالائیت ہے جو ہمارے ہاں تیزی سے پروان چڑھ رہی ہے-خزعلی ماجدی نے عربوں کے ہاں وہابیت کو بدویت کی طرف پلٹنے اور مدنیت سے فرار قرار دیا ہے-اور ہمارے ہاں یہ ہزاروں سال کی رنگا رنگی کو تباہ وبرباد کرکے مونو –کلچر کو پروان چڑھانے کا سبب بن رہی ہے-

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s